حب اغواء کا واقعہ: دو طرفہ فائرنگ میں دو افراد ہلاک

182

حب میں اغوا کاروں و نامعلوم افراد کے مابین مبینہ تصادم و فائرنگ کے نتیجے دو افراد ہلاک ہوگئے-

تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے ضلع حب چوکی میں سسی پنوں روڈ پر چھالیہ بردار گاڑی ڈرائیور اور ساتھی سمیت اغواء کے بعد مبینہ دو طرفہ فائرنگ کے بعد دو اغواء کار مارے گئے جبکہ ایک فرار ہو گیا۔

دونوں مغوی بازیاب کیے گیے جبکہ گاڑی کا سراغ نہ مل سکا مقابلے میں مارے گئے اغواء کاروں کا تعلق کراچی سے بتایاجاتا ہے-

اس حوالے سے حب کے نواحی علاقہ ساکران سے آمد ہ اطلاعات کے مطابق جمعرات اور جمعہ کی درمیانی رات گئے سسی پنوں روڈ پر حسن پیر ایریا سے تین مسلح افراد نے سسی پنوں عباسی پولیس چیک پوسٹ کراس کر کے براستہ ساکران کراچی جانے والی چھالیہ بردار ایک گاڑی کو ڈرائیور اور اسکے ساتھی کے ہمراہ اغواء کر لیا تاہم گاڑی اور مال مالکان کو واقعہ کی اطلاع ملنے پر انھوں نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ علاقے کی ناکہ بندی کر کے گاڑی اور مغویان کی تلاش شروع کردی اسی اثناء پر اُنکا سامنا مسلح افراد سے ہو گیا اور فائرنگ کے دو طرفہ تبادلے میں دو مسلح افراد گولیاں لگنے سے جان کی بازی ہارگئے-

ایدھی ریسکیو ذرائع کے مطابق مارے گئے مبینہ اغواء کا کی شناخت محمد قاسم کے نام سے ہوئی ہے جبکہ دوسرا نامعلوم ہے-

واضح رہے کہ حالیہ دنوں حب اور ساکران میں لوٹ مار اغواء اور قتل کی وارداتوں کی ایک لہر آئی ہوئی ہے جبکہ پولیس کی جانب سے روک تھام کے حوالے سے مکمل خاموشی ہے۔

عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ ضلع حب کے موجودہ ایس پی پولیس کی جانب سے پولیس کے غیر فعال کردار اور پولیس نفری کو عوام کے جان ومال کے تحفظ کے بجائے چوکیاں قائم کر کے مال کمانے کے کام پر لگے ہوئے ہیں۔