سندھ سے ایک اور پروفیسر حراست بعد لاپتہ

54

 سندھ کے شہر لاڑکانہ سے پروفیسر غلام شبیر کلہوڑو کو فورسز نے گرفتاری بعد لاپتہ کردیا

دی بلوچستان پوسٹ ویب ڈیسک کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق صوبہ سندھ کے شہر لاڑکانہ سے پاکستانی فورسز اور خفیہ ادارے کے اہلکاروں نے ایلمنٹری ٹریننگ کالج لاڑکانہ کے پروفیسر غلام شبیر کلہوڑو کو حراست بعد نامعلوم مقام پے منتقل کردیا۔

ذرائع کے مطابق پروفیسر غلام شبیر کلہوڑو کو گزشتہ رات شیخ زید کالونی لاڑکانہ میں واقع ان کے گھر سے حراست میں لیا گیا جو تاحال لاپتہ ہے۔

پروفیسر غلام شبیر کلہوڑو جئے سندھ قومی محاذ (آریسر) کے سینٹر کمیٹی کے ممبر ہے۔

واضع رہے ایک ہفتہ قبل بھی لاڑکانہ شہر سے سندھ یونیورسٹی کے وزٹنگ پروفیسر و مصنف عیسیٰ میمن کو فورسز اور خفیہ اداروں کے اہلکاروں نے گرفتار کرکے نامعلوم مقام پہ منتقل کردیا تھا جو 24 گھنٹے بعد بازیاب ہوکر اپنے گھر پہنچ گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: جبری گمشدگیوں کا عالمی دن، سندھ کے مختلف شہروں میں مظاہرے

یاد رہے کہ سندھی قوم پرست حلقے فورسز اور خفیہ اداروں پر الزام عائد کرتے رہے ہیں کہ ان گرفتاریوں اور جبری گمشدگیوں میں پاکستانی فورسز و خفیہ ادارے ملوث ہیں۔

سندھ میں جبری طور پر لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے آواز اٹھانے والی تنظیم وائس فار مسنگ پرسنز آف سندھ کی اعداد و شمار کے مطابق سندھ سے 200 سے زائد قوم پرست کارکنان اب تک لاپتہ کیئے جاچکے ہیں۔