سالگرہ کے تحفے کی آڑ میں بھیجا گیا بم پھٹنے سے یوکرینی جنرل ہلاک

228

یوکرین کی مسلح افواج کے کمانڈر انچیف ویلری زلوگنی نے کل سوموارکو اپنے معاون گیناڈی چستیاکوف کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ چستیاکوف کی موت انہیں سالگرہ پر بھیجے گئےایک پارسل کےدھماکہ سے ہوئی جس میں مبینہ طور پر بم بھیجا گیا تھا۔

انہوں نے اپنے ٹیلیگرام چینل پر کہا کہ “آج المناک حالات میں سالگرہ کے موقع پر میرے معاون اور قریبی دوست گیناڈی چستیاکوف کو ہلاک کر دیا گیا۔

انہیں ایک پارس بھیجا گیا جس میں بارودی مواد تھا۔ اسے کھولتے ہی وہ دھماکےسے پھٹ گیا۔ یوکرینی جنرل نے سوگواران میں بیوہ اور چار بچے چھوڑے ہیں۔

یوکرینی آرمی چیف نے اس واقعے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار خاندان سے تعزیت کی۔

خبر رساں ایجنسی ’نووستی‘ کے مطابق انہوں نے مزید کہا کہ وجوہات اور حالات کا تعین عدالتی تحقیقات کے دوران کیا جائے گا۔

اس سے قبل یوکرینی میڈیا نے یوکرین کی وزارت داخلہ کا بیان شایع کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ غفلت کے نتیجے میں دستی بم پھٹ گیا جس کے نتیجے میں فوجی عہدیدار کی جان چلی گئی جب کہ ان کے بیٹے کی حالت تشویشناک ہے۔