خضدار میں ڈیتھ اسکواڈ سرغنہ علی اکبر سناڑی کو ہلاک کرنے کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں – بی ایل اے

645

بلوچ لبریشن آرمی کے ترجمان جیئند بلوچ نے بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی ایل اے کے سرمچاروں نے گذشتہ روز خضدار میںجیوا کراس کے مقام پر پاکستانی قبضہ گیر فوج و خفیہ اداروں کی تشکیل کردہ ایک ڈیتھ اسکواڈ کے سرغنہ علی اکبر سناڑی کوفائرنگ کرکے ہلاک کردیا۔

ترجمان نے کہا کہ علی اکبر سناڑی دسمبر 2016 میں قلات کے علاقے نیمرغ میں ڈیتھ اسکواڈ اور ایف سی کے ہمراہ بی ایل اے کےسرمچاروں پر حملے و تنظیم کے سینئر ساتھی سلیمان بلوچ المعروف علی کی شہادت میں براہِ راست ملوث تھا۔ اس کے علاوہ مذکورہشخص خضدار میں قابض فوج و خفیہ اداروں کے ہمراہ نوجوانوں کو جبری لاپتہ کرنے اور کاروباری شخصیات کے اغواء برائے تاوانمیں بھی ملوث تھا۔

انہوں نے کہا کہ علی اکبر سناڑی اپنے قومی جرائم کے باعث بی ایل اے کے ہٹ لسٹ پر تھا۔

جیئند بلوچ نے کہا کہ بلوچ لبریشن آرمی علی اکبر سناڑی پر حملے کی ذمہ داری قبول کرتی ہے اور یہ واضح کرتی  ہے کہ بلوچ قومیتحریک کیخلاف متحرک افراد کو بلا تفریق رنگ، نسل اور قومیت کسی بھی صورت بخشا نہیں جائے گا۔ بلوچ تحریک کے خلاف سرگرمقابض فوج کے ہمکاروں کو بی ایل اے ایک بار پھر  وارننگ دیتی ہے کہ وہ قومی غداری سے دست بردار ہوجائیں، بصورت دیگر سزاکیلئے تیار رہیں۔