کریمہ بلوچ کی شہادت و تدفین سے متعلق ریاست کا رویہ انتہائی منفی رہا – نیشنل پارٹی

75

نیشنل پارٹی کے مرکزی ترجمان نے کہا کہ کریمہ بلوچ کی شہادت اور تدفین سے متعلق ریاست اور ریاستی اداروں کا رویہ انتہائی منفی اور قابل مذمت رہا، وفاقی و صوبائی حکومتوں نے بوکھلاہٹ اور ناشاہستگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تمام انسانی اقدار کو پاوں تلے روند ڈالا جس کی جس قدر بھی مخالفت و مذمت کی جائے کم ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ یہ خاندان اور ورثہ کریمہ بلوچ کی استحقاق اور زمہ داری تھی کہ وہ جس طرح مناسب سمجھتے وہ شہید کریمہ بلوچ کی تدفین اور آخری رسومات ادا کرتے اور یہ ان کی مرضی و منشا کے مطابق جہاں سے مناسب سمجھتے محترمہ شہید کریمہ بلوچ کی جسد خاکی کو ایسے راستے سے لے جاتے لیکن ریاست اور اس کے ادارے بےجا مداخلت کا مرتکب ہوئے اور ایک انتہائی حساس قومی رہنماء کے تدفین اور منتقلی کے عمل میں رکاوٹ بنے جو نہ صرف ناشاہستگی کے زمرے میں آتا ہے بلکہ دنیا کا کوئی سماج و مذہب اس کی اجازت ہرگز نہیں دیتا ہے، یہ امر افسوسناک ہے کہ یہ عمل دوسری بار بلوچستان میں دہرایا گیا اور بلوچستان کے شہید رہنماء کی جسدخاکی کی بے حرمتی کی گئی جو ناقابل برداشت اور قومی و وطنی روایات کے خلاف سازش کا تسلسل ہے۔

ترجمان نے کہا نیشنل پارٹی شہید بانک کریمہ بلوچ کو ان کے قومی سیاسی جدوجہد پر انھیں خراج عقیدت پیش کرتا ہے اور اس کا مطالبہ پہلے کرچکا ہے کہ کینیڈا کی حکومت اس قتل کی تحقیقات میں کوئی بھی کثر فروگزاشت نہیں کرے بلکہ اس کی تہہ تک پہنچنے کی کوشش کرئے اور قتل کے پس پردہ کرداروں کو بے نقاب کرئے۔

ترجمان نے کہا نیشنل پارٹی کی قیادت مرحومہ کی مغفرت کے لیے دعا گو ہے اور متاثرہ خاندان سے اپنی دلی ہمدردی کا اظہار کرتا ہے۔