پاکستان میں الیکشن کے دن موبائل و ڈیٹا سروسز کی بندش آزادی اظہار پر حملہ ہے – ایمنٹسی

186

ایمنسٹی انٹرنیشنل جنوبی ایشیا نے پاکستان میں انتخابات کے روز موبائل و ڈیٹا سروسز کی بندش کو عوام کے آزادی اظہار رائے اور پرامن اجتماع کے حقوق پر حملہ قرار دیا ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کی جانب سے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر کہا گیا ہے کہ ملک میں انتخابات کے دن ٹیلی کمیونیکیشن اور موبائل انٹرنیٹ سروسز کی معطلی کا فیصلہ آزادی اظہار اور پرامن اجتماع کے حقوق پر ایک دو ٹوک حملہ ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے پاکستانی حکام سے انٹرنیٹ تک رسائی پر عائد پابندیوں کو فوری طور پر ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

اسی طرح ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان نے بھی موبائل اور ڈیٹا سروسز کی بندش سے رائے دہندگان کے معلومات کے حق اور ممکنہ طور پر نتائج کی ترسیل متاثر ہونے کا خدشہ ظاہر کیا.

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر ایچ آر سی پی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ سندھ ہائی کورٹ کی جانب سے نگراں حکومت کو پولنگ کے دن بلاتعطل انٹرنیٹ سروسز کو یقینی بنانے کی ہدایت کے باوجود سروسز میں مسلسل خلل پیدا ہوا ہے۔

بیان میں پی ٹی اے کے دعویٰ کا حوالہ دیتے ہوئے کہ اسے حکومت کی جانب سے انٹرنیٹ سروسز کو بلاک کرنے کی کوئی ہدایات موصول نہیں ہوئی ہیں، اس بارے میں شفافیت کا فقدان ہے کہ یہ خلل کہاں ہے اور کب تک جاری رہے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ موبائل اور ڈیٹا سروسز کی بندش سے رائے دہندگان کے معلومات کے حق اور ممکنہ طور پر نتائج کی ترسیل متاثر ہو گی۔

بیان میں کہا گیا کہ جن لوگوں نے یہ حکم دیا ان کی شناخت کی جائے اور ذمہ دار ٹھہرایا جانا چاہیے۔