غزہ جنگ کے خلاف احتجاج، امریکی فضائیہ کے اہلکار کی اسرائیلی سفارت خانے کے باہر خودسوزی کی کوشش

137

امریکہ میں اسرائیلی سفارت خانے کے باہر غزہ میں جاری جنگ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے امریکی فوج کے ایک اہلکار نے خود سوزی کی کوشش کی ہے۔

خبر رساں ادارے ’رائٹرز‘ کے مطابق واشنگٹن ڈی سی حکام کا کہنا ہے کہ اتوار کے روز ایک شخص نے احتجاج کرتے ہوئے اچانک خود کو آگ لگانے کی کوشش کی۔

واشنگٹن ڈی سی کے محکمۂ فائر کے مطابق سیکریٹ سروس کے اہلکاروں نے اسرائیلی سفارت خانے کے قریب واقعے کے بعد آگ فوری طور پر بجھا دی تھی جب کہ جھلس جانے والے شخص کو قریب واقع ایک اسپتال منتقل کر دیا گیا۔

میٹروپولیٹن پولیس ڈپارٹمنٹ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ جھلس کر زخمی ہونے والے شخص کی حالت بدستور نازک ہے۔

امریکی فضائیہ کے ترجمان نے تصدیق کی ہے کہ واقعے میں زخمی ہونے والا شخص فضائیہ کا اہلکار ہے۔

اس سے قبل ریاست جارجیا کے شہر اٹلانٹا میں بھی اسرائیل کے قونصل خانے کے باہر ایک شخص نے خود سوزی کی کوشش کی تھی۔

امریکی اخبار ’نیویارک ٹائمز‘ کی ایک رپورٹ کے مطابق امریکی فضائیہ کے اہلکار نے اپنے جسم پر محلول ڈالا اور خود کو آگ لگا دی۔ اس کے ساتھ ساتھ وہ ’فری فلسطین‘ کے نعرے بھی لگا رہا تھا۔

اتوار کو پیش آنے والے واقعے میں متاثرہ شخص نے فوجی یونیفارم میں ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر پوسٹ کی تھی جس میں اس کا کہنا تھا کہ وہ نسل کشی میں مزید ملوث نہیں رہے گا۔

پولیس اور سیکریٹ سروس نے اس واقعے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

خیال رہے کہ سات اکتوبر 2023 کو حماس کے اسرائیل پر حملے کے بعد غزہ میں شروع ہونے والی جنگ کے بعد واشنگٹن ڈی سی میں اسرائیل کے سفارت خانے کے باہر متواتر احتجاج ہو رہے ہیں۔

غزہ میں جنگ شروع ہونے کے بعد فلسطینیوں کی حمایت کے ساتھ ساتھ امریکہ میں اسرائیل کے حامی بھی مظاہرہ کر رہے ہیں۔

حماس کے حملے میں اسرائیلی حکام کے مطابق 1200 افراد ہلاک جب کہ 240 سے زائد کو یرغمال بنا لیا گیا تھا۔

حماس کے حملے کے بعد اسرائیل نے غزہ میں زمینی و فضائی کارروائی شروع کر دی تھی جو اب بھی جاری ہے۔

حماس کے زیرِ انتظام غزہ کے محکمۂ صحت کے مطابق غزہ میں اسرائیلی حملوں سے لگ بھگ 30 ہزار افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

واضح رہے کہ غزہ میں جنگ بندی کے لیے امریکہ میں جہاں احتجاج ہوئے ہیں وہیں حماس کی تحویل میں موجود یرغمال افراد کو بازیاب کرائے جانے کے مطالبات بھی سامنے آ رہے ہیں۔