تربت: طلباء اور یونیورسٹی انتظامیہ کے مابین مزکرات کامیاب، دھرنا ختم

170

بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کی جانب سے تُربَت یونیورسٹی کے مسائل پر یونیورسٹی انتظامیہ کے مابین مزکرات کامیاب ہوگئے ہیں ۔

بساک کا یونیورسٹی انتظامیہ کی طلباء اساتذہ کے ساتھ ناروا سلوک کے خلاف دھرنا دو دن تک جاری رہا۔

یاد رہے کہ جامعہ میں طلباء کو کتب میلے سمیت دیگر تعلیمی و علمی پر جامعہ کے جانب سے رکاوٹوں کا سامنا تھا۔ پچھلے دنوں جامعہ بلوچستان کے پروفیسر کو جامعہ میں لیکچر سیشن سے روک دیا گیا تھا جس کے بعد بساک نے احتجاجی دھرنا دیا جو آج اپنے مطالبات کو منوانے میں کامیاب ہوا۔

جامعہ تربت نے نوٹفیکیشن جاری کرتے ہوئے لکھا کہ جامعہ گیٹ پر باہر سے آئے طلباء و دیگر متعلقہ افراد کو ایس او پیز سے گزرنے کے بعد اجازت دی جائے گی۔ ہاسٹل سمیت جامعہ میں سیاسی و علمی تقریبوں کی اجازت دی جائے گی۔ ہاسٹل میں جامعہ کے طلباء کو مخصوص اوقات میں اجازت دی جائے گی۔

تاہم بساک کے رہنماؤں نے کہا کہ اگر ان مطالبات پر عملدرامد نہیں کیا گیا تو تنظیم دوبارہ احتجاج کا حق محفوظ رکھتی ہے
‏بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کااحتجاجی دھرنا اپنے مطالبات منوانے کے بعد ختم کرنے کا اعلان کیا۔