دو حملوں میں پاکستانی فوج کے دس اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔ بی ایل ایف

711

بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان میجر گہرام بلوچ نے میڈیا کو جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ بی ایل ایف کے سرمچاروں نے مشکے اور مند میں پاکستانی فوج پر حملہ کرکے دس اہلکاروں کو ہلاک کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سرمچاروں نے دو جون کو رات نو بجے مشکے میں فرنٹئیر کور (ایف سی) کی ہیڈ کوارٹر اور مین کیمپ پر راکٹوں اور خودکار بھاری ہتھیاروں سے حملہ کیا۔ مشکے نلی میں واقع کیمپ پر سرمچاروں نے دو اطراف سے حملہ کرنے کے بعد مین گیٹ میں گھس کر راکٹ کے کئی گولے فائر کئے۔ گیٹ کے سامنے کھڑے پانچ اہلکار راکٹ حملے میں پہلے ہی ہلاک ہو چکے تھے۔ شدید حملے میں نو اہلکار ہلاک، متعدد زخمی اور دو گاڑیاں تباہ ہوئی ہیں۔ ہلاک اہلکاروں میں وزیر نامی ایک مقامی ایجنٹ بھی شامل ہے جو ریاستی ڈیتھ اسکواڈ سرغنہ سرور کا بھتیجا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ دو جون ہی کو کیچ کے علاقے مند میں چکاپ کے مقام پر قائم فوجی چوکی پر سرمچاروں نے اسنائپر سے حملہ کیا، جس سے ایک اہلکار ہلاک ہوا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ بی ایل ایف ان حملوں کی ذمہ داری قبول کرتی ہے۔ یہ حملے بلوچستان کی آزادی تک جاری رہیں گے۔