روس یورپی روایتی فورسسز کنونشن سے علیحدگی اختیار کر رہا ہے

188

پوتن کے دستخط شدہ حکم نامے کے ساتھ، نائب وزیر خارجہ سرگئی ریابکوف روس کی طرف سے یورپی روایتی فورسز کنونشن کی تحلیل کے عمل کا انتظام سنبھالیں گے۔

روسی صدر ولادیمر پوتن نے روس کے لیے یورپی روایتی فورسز کنونشن سے دستبرداری کا عمل شروع کیا ہے۔

پوتن کے دستخط شدہ حکم نامے کے ساتھ، نائب وزیر خارجہ سرگئی ریابکوف روس کی طرف سے یورپی روایتی فورسز کنونشن کی تحلیل کے عمل کا انتظام سنبھالیں گے۔

حکم نامے کے مطابق، ریابکوف یورپی روایتی فورسز کنونشن کو تحلیل کرنے کے عمل میں پوتن کے سرکاری نمائندے کے طور پر، روسی پارلیمان کے ایوان زیریں، دوما اور رشین فیڈریشن کونسل میں جائزاتی عمل میں مشاورت کریں گے۔

طرفین کے لیے روایتی قوتوں میں حد بندی لانے والے اس معاہدے پر نیٹو اور سوویت یونین کے درمیان سال 1990 میں پیرس میں دستخط ہوئے تھے۔

جبکہ روس نے سن 2015 میں یورپی روایتی فورسز کنونشن میں شراکت کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔