تعلقات کی بحالی کے بعد اسرائیل کے صدر کا پہلا دورہ بحرین

92

اسرائیلی صدر آئزک ہرزوگ نے بحرین کا دورہ کیا ہے جو 2020 میں بحرین کے اسرائیل سے تعلقات کی بحالی کے بعد کسی اسرائیلی صدر کا بحرین کا پہلا دورہ ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ’اے ایف پی‘ کے مطابق اسرائیلی صدر آئزک ہرزوگ نے بحرین کے شاہ حماد عیسیٰ الخلیفہ اور ولی عہد شیخ سلمان بن حمد الخلیفہ سے ملاقات کی۔

رپورٹ کے مطابق بحرین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے بتایا کہ دونوں ممالک کے سربراہان نے علاقائی سیکیورٹی اور نجی شعبوں کے نمائندگان کے درمیان روابط کو فروغ دینے سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔

خیال رہے کہ 2020 میں متحدہ عرب امارات، مراکش اور بحرین پہلی عرب ریاستیں تھیں جنہوں نے دہائیوں بعد اسرائیل کے ساتھ تعلقات بحال کیے تھے جہاں سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے مذاکرات کی سربراہی کی تھی۔

اس سے قبل صہیونی ریاست نے اپنے پڑوسی ممالک مصر اور اردن کے ساتھ امن معاہدوں کے لیے رابطہ کیا تھا۔

اسرائیلی صدر آئزک ہرزوگ نے کہا کہ ’میں اس خطے کی دیگر ریاستوں سے بھی مطالبہ کرتا ہوں کہ اس شراکت داری میں شامل ہوکر مشرق وسطیٰ کو مزید مضبوط بنائیں۔‘

انہوں نے کہا کہ عالمی اور علاقائی استحکام کو درپیش خطرات کے پیش نظر مشرقی وسطیٰ کے دائرے کو وسعت دینے کے لیے امن کا قیام بہت اہم ہے اور نفرت، دھمکیوں اور دہشت کے اس ماحول میں ایک ہی جواب ہے کہ ’دوستوں کے ساتھ اتحاد‘ کیا جائے۔

خطے کے دیگر ممالک بالخصوص سعودی عرب بارہا کہتا رہا ہے کہ وہ فلسطینیوں کے ساتھ تنازع کے حل تک اسرائیل کے ساتھ سرکاری سطح پر تعلقات قائم نہ کرنے کے دہائیوں پرانے عرب لیگ کے موقف پر قائم رہیں گے۔

بحرین نیوز ایجنسی کے مطابق شاہ حماد عیسیٰ الخلیفہ نے کہا کہ بحرین منصفانہ، جامع اور پائیدار امن کے حصول کا حامی ہے جو کہ فلسطینی عوام کے جائز حقوق کی ضمانت دیتا ہے اور یہ راستہ فلسطینی اور اسرائیلی عوام کے ساتھ ساتھ خطے کے دیگر لوگوں کے لیے بھی استحکام، ترقی اور خوشحالی کا باعث بنے گا۔

اسرائیلی صدر آئزک ہرزوگ نے ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ ’امن، رواداری اور دوستی کے لیے بحرین کے شاہ حماد عیسیٰ الخلیفہ کے خیالات کا خیرمقدم کرتا ہوں۔‘

انہوں نے کہا کہ میرا دورہ بحرین کے ساتھ دفاع، تجارت، سیاحت اور ماحولیات کے شعبے میں تعلقات سمیت شراکت داری کی اہمیت کی نشاندہی کرتا ہے۔

اس سے قبل اسرائیل کے سابق وزیراعظم یائر لیپڈ نے گزشتہ برس ستمبر میں سفارت خانہ کھولنے کے لیے بحرین کا دورہ کیا تھا جبکہ رواں برس فروری میں اسرائیل نے بحرین کے ساتھ دفاعی معاہدے پر دستخط کیے تھے۔

آئزک ہرزوگ نے گزشتہ روز کہا تھا کہ وہ بحرین کے بعد متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابوظبی کا دورہ کریں گے۔