چاغی کے مختلف علاقے زیرآب

251

بلوچستان کے دیگر علاقوں کی طرح افغانستان سے متصل سرحدی علاقہ چاغی میں بارشوں کے باعث سیلابی صورتحال سے کئی علاقے زیر آب آگئے ہیں۔

گذشتہ رات سے دالبندین و دیگر نواحی علاقوں بارشوں کا پانی سیلابی ریلوں کی صورت داخل ہونا شروع ہوگیا۔ اطلاعات کے مطابق دالبندین کا نواحی کچی آبادی کلی محمد رحیم زیر آب آگیا جہاں گھروں میں پانی داخل ہونے سے مکین بے گھر ہوگئے۔

اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ سیلابی ریلے سے متعدد کچے مکانات کو جزوی نقصان پہنچا جبکہ لوگ اپنی مدد آپ کے تحت بارش کا پانی گھروں سے نکال رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حفاظتی بند نہ ہونے کی وجہ سے علاقے میں سیلابی ریلہ داخل ہوا۔

دریں اثناء چاغی بازار اور برآبچاہ میں سیلابی ریلہ داخل ہوگیا، سیلابی ریلے سے کچے دوکانیں اور مکانات کو جزوی نقصان پہنچا ہیں۔

اسی طرح ماشکیل میں بُھگ کے علاقے ہامون ماشکیل میں سیلابی ریلے آنے سے ماشکیل کا دیگر علاقوں سے زمینی رابطہ منقطع ہوگیا ہے۔ علاقے میں آمد و رفت کے ذرائع محدود ہونے سے اشیائے خوردنوش کی قلت کا اندیشہ ہے۔

تاحال کسی قسم کی جانی نقصانات کی اطلاعات موصول نہیں ہوئی ہے جبکہ حکومتی سطح پر امدادی کاروائیوں کا آغاز بھی نہیں ہوسکا ہے۔