پاکستان سینٹ اجلاس: حمید زہری و دیگر لاپتہ افراد متعلق توجہ دلاو نوٹس

205

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں جماعت اسلامی خیبر پختونخوا کے امیر اور سینیٹر مشتاق احمد نے سنیٹ اجلاس کے دوران بلوچستان اور خیبر پختونخوا میں جبری گمشدگیوں کے مسئلے پر چیئرمین سینٹ اور ہیومن رائٹس کمیٹی کو متوجہ کرتے ہوئے کہا کہ وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز کا دھرنا اس موسم میں بھی پریس کلب کے سامنے جاری ہے –

انہوں نے کہا کہ ‏بلوچستان کی سعیدہ حمید زہری اپنے لاپتہ والد کی بازیابی کیلئے دھرنے پر بھیٹی ہے –

بلوچ، پختون مسنگ پرسنز اور پورے پاکستان سے مسنگ پرسنز کی بازیابی کے لیے سینیٹر مشتاق احمد نے حکومت پاکستان اور ہیومن رائٹس کمیٹی کی توجہ مبذول کرائی۔

کراچی سے جبری گمشدگی کا شکار ضلع خضدار کے تحصیل زہری کے رہائشی عبدالحمید زہری کے لواحقین کے مطابق گذشتہ سال 10 اپریل کو مقامی پولیس و سادہ کپٹروں میں مبلوس اہلکاروں نے کراچی میں انکے گھر پر دیر رات چھاپہ مار کر گھر میں موجود عبدالحمید زہری ولد شکر خان کو اپنے ہمراہ لے گئے۔

اہلیہ لاپتہ عبدالحمید زہری کے مطابق واقعہ کے بعد ہم نے مقامی پولیس و دیگر اداروں سے گھر پر بغیر کسی وارنٹ کے چھاپہ مارنے اور عبدالحمید زہری کے گرفتاری بابت رجوع کی تو مقامی پولیس نے ایسے کسی واقعے کی تردید کی۔

خیال رہے کہ لاپتہ عبدالحمید زہری کی لواحقین گذشتہ کئی ہفتوں سے سراپا احتجاج ہیں اور کراچی میں رواں ہفتے دو روزہ بھوک ہڑتالی کیمپ بھی لگایا کیا تھا –