سارنگ جویو رہا ہوکر گھر پہنچ گئے

108

 سندھ سے پاکستانی فورسز اور خفیہ اداروں کے ہاتھوں لاپتہ ہونے والے سارنگ جویو رہا ہوکر گھر پہنچ گئے۔

دی بلوچستان پوسٹ کو موصول آمدہ اطلاعات کے مطابق معروف سندھی ادیب تاج جویو کے بیٹے سارنگ جویو رہا ہوکر گھر پہنچ گئے

سارنگ جویو ذوالفقار علی بھٹو انسٹیٹیوٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (زیبسٹ) کراچی میں سندھ ابھیاس اکیڈمی میں ریسرچ ایسوسی ایٹ، اور سندھ سجاگی فورم نامی تنظیم کے جوائنٹ سیکریٹری ہیں۔

انکے والد تاج جویو کے مطابق ان کے بیٹے کو 11 اگست کی رات ڈیڑھ بجے پولیس اور رینجرز کی متعدد گاڑیوں نے اختر کالونی میں پلازہ کا گھیراؤ کرکے سی سی ٹی وی کیمرے توڑ دیے، اس کے بعد 10 کے قریب پولیس اور سادہ لباس میں نقاب پوش اہلکار سارنگ کے کرائے پر گھر کا دروازہ توڑ کر اندر داخل ہوگئے اور انہیں گرفتار کرکے لاپتہ کردیا۔

یاد رہے گذشتہ دنوں سارنگ جویو کی عدم بازیابی کے خلاف وائس فار مسنگ پرسنز آف سندھ کی جانب سے کراچی پریس کلب سے گورنر ہاؤس تک مارچ کرنے کی کوشش کیا گیا تھا جسکو رینجرز اور پولیس نے گورنر ہاؤس تک جانے نہیں دیا تھا۔

جبکہ گذشتہ رات سارنگ جویو رہا ہوگئے تاہم انکے دو کزن تاحال لاپتہ ہیں۔