شہید ستار بلوچ کو سر خ سلام،1 فوجی اہلکار کو ہلاک کیا – بی ایل ایف

175

بلوچ مسلح آزادی پسند تنظیم بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے کہا کہ یکم اگست کو پاکستانی فوج نے ضلع کیچ کے علاقے تمپ نذر آباد میں آپریشن کے دوران بی ایل ایف کے شہری نیٹ ورک کے سرمچار ستار ولد ڈاکٹر محمد سکنہ دشت کھڈان کو اُٹھا کرآنکھوں پر پٹی باندھ کر کچھ فاصلے پر لے جا کر گولیوں سے بوندھ کر شہید کیا۔ پاکستان تمام عالمی قوانین کی پامالی کر رہاہے مگر عالمی طاقتیں اور ادارے مسلسل چشم پوشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔ اس کا فائدہ اُٹھاکر پاکستان بلوچ قومی تحریک کو کچلنے کیلئے بلوچ نسل کشی کر رہا ہے۔ ساتھ ہی بلوچستان کی روادارانہ ماحول کو پراگندہ کرنے کیلئے مذہبی انتہا پسندی کی نشو ونما کر رہاہے، جو نہ صرف بلوچستان بلکہ پورے خطے و دنیا کیلئے خطرے کی نشانی ہے۔

گہرام بلوچ نے شہید ستار بلوچ کو خراج تحسین اور سرخ سلام پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ چار سالوں سے بی ایل ایف کے پلیٹ فارم سے شہری ذمہ د اریاں سر انجام دے رہاتھا۔ وہ ایک انتہائی نڈر اور قابل گوریلا جنگجو تھے اور انہوں نے چار سالوں میں نہایت احسن طریقے سے بلوچ قومی تحریک میں خدمات سرانجام دیں۔ قابض ریاست نے جولائی کے مہینے میں شہید ستار کے بھائی کو اُٹھاکر لاپتہ کیاتھا، جس کی ابھی تک کوئی خبر نہیں ہے۔

گہرام بلوچ نے مزید کہا کہ جمعہ کے روز سرمچاروں نے زعمران کے علاقے نوانو میں آرمی کیمپ کی چیک پوسٹ پر اسنائپر حملہ کرکے ایک فوجی اہلکار کو ہلاک کیا۔ یہ حملے بلوچستان کی آزادی تک جاری رہیں گے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here