حانی گل بے بس بلوچ خواتین کی آواز بن گئی ہے – اختر ندیم

104

میں ریاستی بربریت کو ظاہر کرنے پر بہن حانی گل کی ہمت کو سلام پیش کرتا ہوں، ان خیالات کا اظہار ملسح بلوچ آزادی پسند رہنماء اختر ندیم نے سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ اپنے پیغام میں کیا۔

اختر ندیم بلوچ نے جبری گمشدگی کا شکار ہونے حانی گل کے حوالے سے مزید کہا کہ وہ ایسے بلوچ خواتین کی آواز بن گئی ہیں جو پاکستان کی سرکشی پر بے بسی کے باعث خاموش ہیں۔

ان کا مزید کہنا ہے ملاؤں اور نام نہاد قوم پرستوں کا کردار اپنے آپ میں ایک توہین ہے۔ جنہوں نے اپنا ضمیر حقیر سی قیمت پر بیچا ہے۔

یاد رہے گذشتہ دنوں حانی گل نامی بلوچ خاتون نے کوئٹہ پریس کلب کے سامنے وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز کے کیمپ میں میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انکشاف کیا تھا کہ انہیں اور ان کے منگیتر کے ہمراہ پانچ مہینے قبل پاکستانی خفیہ اداروں نے جبری طور پر گمشدگی کا شکار بنایا تھا جہاں انہیں تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

حانی گل کے مطابق انہیں تین مہینے آئی ایس آئی اہلکاروں نے تین مہینے جبری طور پر لاپتہ کرنے کے بعد رہا کردیا جبکہ ان کی منگیتر محمد نسیم تاحال لاپتہ ہے۔

حکومتی حکام کی جانب سے تاحال اس حوالے سے کچھ نہیں کہا گیا ہے جبکہ بلوچ سیاسی اور سماجی حلقوں کی جانب سے اس حوالے سے ردعمل کا اظہار کیا جارہا ہے۔