سری لنکا میں چرچ کے قریب ایک اور دھماکا

43

سری لنکا میں چرچ کے نزدیک پولیس کی جانب سے بم کو ناکارہ بنانے کے دوران دھماکا ہوا۔

پولیس ترجمان کے مطابق دھماکے کی نوعیت یا اس سے ہونے والے جانی نقصان کے حوالے سے کوئی اطلاعات سامنے نہیں آئی ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق دھماکا، اتوار کے روز 3 چرچوں میں ہونے والے خودکش دھماکے جس کے نتیجے میں 300 افراد جاں بحق ہوگئے تھے، میں سے ایک چرچ سینٹ اینتھونی کے 50 میٹر دور ہوا۔

دھماکے کے عینی شاہد کا کہنا تھا کہ ’بم ڈسپوزل یونٹ اسپیشل ٹاسک فورس (ایس ٹی ایف) اور ایئر فورس کی جانب سے بم کو ناکارہ بنانے کے دوران وین دھماکے سے تباہ ہوگئی‘۔

واقعے کے حوالے سے معلومات حاصل کرنے کے لیے سیکیورٹی فورسز کے ترجمان سے بھی رابطہ قائم کرنے کی کوشش کی گئی تاہم وہ دستیاب نہیں ہوسکے۔

خیال رہے کہ حکام کا کہنا تھا کہ پولیس کو کولمبو بس اڈے سے 87 بم ڈیٹونیٹرز ملے ہیں۔

اپنے بیان میں انہوں نے بتایا کہ پولیس کو بستیان مواتھا نجی بس اسٹینڈ سے ڈیٹونیٹرز ملے جن میں سے 12 زمین پر اور 75 قریبی کوڑے سے پائے گئے۔

خیال رہے کہ سری لنکا میں ایسٹر کی تقاریب کرنے والے چرچز اور ہوٹلز میں یکے بعد دیگرے دھماکے دیکھنے میں آئے۔

ان دھماکوں میں میں 290 افراد ہلاک اور 500 سے زائد زخمی ہوئے۔

حکام کا ماننا ہے کہ مقامی اسلامی شدت پسند تنظیم قومی توحید جماعت (این ٹی جے) ان حملوں کے پیچھے ہے۔