لاڈکانہ میں ریاستی پارٹی پر بم حملے کی زمہ داری قبول کرتے ہیں ۔ ایس آر اے

137

سندھی قوم اپنے قومی وجود کی بقاء کی خاطر پاکستانی ریاست، اس کی فوج اور اس کے انتخابی ایجنٹوں سے بیزاری کا اظہار کرتے ہوئے انتخابات کا مکمل بائیکاٹ کرے۔ ترجمان سوڈھو سندھی

سندھودیش روولیوشنری آرمی کے ترجمان سوڈھو سندھی نے نامعلوم مقام سے میڈیا میں جاری کردہ اپنے بیان میں کہا کہ سندھودیش روولیوشنری آرمی (ایس آر اے) نے گذشتہ رات لاڑکانہ میں سندھ دشمن پارٹی ، پاکستان پیپلز پارٹی سندھ کے صوبائی صدرنثارکھوڑو کے گھر پر بم حملہ کیا۔

ترجمان نے کہا کہ پاکستانی انتخابات سندھ وطن کو پاکستان کے اندر غلام بناکر رکھنے کا محض ایک سامراجی حربہ ہے۔ جس کے ذریعے پنجاب سامراج نام نہاد جمہوریت اور اس کے نام پر لائے گئے سامراجی ایجنٹوں کے ہاتھوں سندھ دشمن فیصلے کروانے میں کامیاب ہوتا رہا ہے۔ پاکستان بنتے ہی پنجاب سامراج نے اپنی فوج اور نام نہاد اسمبلیوں کی قانونی اور آئینی ہتھکنڈوں کے زور پر سندھ دھرتی کے تمام وسائل،سندھودریاء ، سمندر ، واپار، کاروبار،شہروں، شاہراہوں ، زرعی زمینوں، معدنیات، تیل ، گیس اور کوئلے پر قبضہ کرلیا ہے۔ جس وجہ سے سندھی اپنی ہی دھرتی پر اپنے وسائل کی مالکی کے حق سے محروم ہوگئے ہیں۔ پنجابی سامراج کی ان ہی آلہ کاراسمبلیوں سے سندھ دشمن قوانین پاس کرواکر لاکھوں کی تعداد میں باہر سے غیر سندھیوں کو لاکر یہاں سندھ کے شہروں ، کاروباروں اور بازاروں پر قبضہ کروایا گیا ہے۔جس وجہ سے سندھی قوم کا معاشی قتل عام ہورہا ہے اور۶۰ فیصد سے زیادھ سندھ کے باسی آج غربت کی لکیر سے بھی نیچے زندگی گزار رہے ہیں اورسندھ کے ڈگری یافتہ نوجوان بیروزگاری کی وجہ سے خودکشیاں کرنے پر مجبورہیں۔اس نو آباکاری کی وجہ سے سندھی اپنی ہی دھرتی پر اقلیت میں تبدیل ہوکر ختم ہورہے ہیں۔

پنجاب سامراج ایک طرف پنجابی فوج کے ہتھیاروں کے زور پر سندھ دشمن منصوبے سی پیک (چائنہ پاکستان اقتصادی راہداری) کے تحت سندھ کے سمندر ، بندرگاہیں ، ساحل ، سندھ کی زمین ، شاہراہیں ، کوئلہ اور دیگر وسائل پر قبضہ کرکے چین کے حوالے کر رہا ہے تو دوسری جانب سندھ میں جماعت الدعوۃ سمیت بہت ساری مذہبی شدت پسند اور دہشتگرد گروہوں کو مضبوط کر رہا ہے ۔ جس کی وجہ سے سندھ کے سیکیولر کلچرکو تباہ ہوجانے کا خطرہے۔

پاکستان کی ساری اسمبلیاں اور ادارے صرف اور صرف پنجاب سامراج ، اس کی ایجنسیز اور اس کی آرمی کے ہی کنٹرول میں ہے۔پنجاب سامراج مظلوم اقوم کو غلامی میں جکڑ کر رکھنے کے لئے الیکشن کا ڈرامہ کرتا رہتا ہے ، یہ سب اسمبلیاں پاکستان آرمی کے سامنے محض ربڑ اسٹیمپ ہیں۔ جس کی موجودگی میں سندھ کے سیکڑوں سیاسی اور قومپرست کارکنان کو اٹھاکرجبری طور پر لاپتہ کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا یہ سندھی قوم کی زندگی اور موت کی جنگ ہے ۔ جس کے لئے سائیں جی ایم سید کا آزادی کا فکر، پاکستانی ریاست اور اس کے الیکشن ڈرامے کو رد کرتاہے۔اس لئے سندھی قوم اپنے قومی وجود کی بقاء کی خاطر پاکستانی ریاست، اس کی فوج اور اس کے انتخابی ایجنٹوں سے بیزاری کا اظہار کرتے ہوئے انتخابات کا مکمل بائیکاٹ کرے۔

ترجمان نے کہا کہ ہم سندھی قوم سے اپیل کرتے ہیں کہ25 جولائی کے دن پولنگ اسٹیشنوں سے دوررہیں اور ایس آراے سندھ کی مکمل آزادی تک اپنی جدوجہد جاری رکھنے کا عزم رکھتی ہے۔